نظیرہ

ابجد میں ہر حرف سے پندرھواں حرف نظیرہ کہلاتا ہے ۔ دوسرے لفظوں میں یوں سمجھیں کہ ابجد کو چودہ چودہ حروف کی دو سطور میں عین اوپر نیچے لکھیں تو ہر حرف کا نظیرہ اس کے اوپر یا نیچے کا مد مقابل ہوگا ۔ ہم یہاں ابجد قمری کی مثال دیتے ہیں اسی طریق پر ہر ابجد کا نظیرہ معلوم کیا جاسکتا ہے ۔
nazeera-abjad-e-qamriاب غور کریں حرف ” ا ” کا نظیرہ ” س ”   اور ” س ” کا نظیرہ ” ا ” ہوا ۔
اسی طرح حرف ” ب ” کا نظیرہ ” ع ” اور ” ع ” کا نظیرہ ب ہوا ۔

مثلاً ہمارے مطلوبہ حروف ہیں ” ع ر ا ق ” اور ہمیں ان حروف کو ابجد قمری سے نظیرہ دینا ہے تو
ع ر ا ق
ب و س ھ

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*