Numerology::.علم الاعداد

مراد کب پوری ہوگی؟ (علم الاعداد کی روشنی میں)۔

 اکثر و بیشتر مجھے اس قسم کی ای میل موصول ہوتی ہیں جن میں یہ سوال ہوتاہے کہ فلاں خواہش کب پوری ہوگی یا فلاں مراد کب پوری ہوگی ۔ آج اسی بات کو پیش نظررکھتے ہوئے یہ سطور قلمبند کی جا رہی ہیں ۔ دنیا میں بے شمار طریق رائج ہیں جیسے علم الجفر، علم الرمل،علم النجوم وغیرہ جن سے علمائے روحانیات نے یہ جاننے کے طریقے وضع کئے ہیں کہ فلاں مراد کب پوری ہوگی ، ہوگی بھی یا نہیں؟۔ انہی علوم میں علم الاعداد بھی شامل ہے علم الاعداد سے بھی یہ معلوم کیا جا سکتاہے کہ فلاں خواہش کب پوری ہوگی ؟۔
اگر آپ بھی یہ جاننا چاہتے ہیں کہ آپ کی فلاں خواہش کب تک پوری ہوگی تولیجئے مفصل طریقہ پیش خدمت ہے ۔
سب سے پہلے اپنے نام بمع نام والدہ کے اعداد حاصل کریں
اگر مرد ہے تو بن اور عورت ہے تو بنت کے اعداد بھی شامل مجموعہ کریں۔
اس کے بعد امور مطلوبہ یعنی جس چیز کی خواہش ہے کے نام کے اعداد بھی جمع کرلیں
جس روز سوال کیا جا رہا اس کے اعداد اور جس ساعت میں سوال کیا گیا ہے اس کے اعداد بھی جمع کریں۔ مجموعہ کا مفرد عدد حاصل کریں
اگر مفرد عدد ایک آیا ہے تومراد پوری نہیں ہوگی
اگر مفرد عدد دو آیا ہے تو توقف کے بعد پوری ہو
اگر تین آیا ہے تو جلد ہی پوری ہونے والی ہے ۔
اگر مفرد عدد تین سے بڑھ جائے تو تین پر تقسیم کر کے حاصلہ عدد پر مندرجہ بالا قانون لاگو کریں۔
مثال
علی بن زید۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اعداد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۱۸۳
امور مطلوبہ:شادی۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اعداد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۳۱۵
روز سوال:جمعہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اعداد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۱۱۸
ساعت سوال:زہرہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اعداد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۲۱۷
کل میزان۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔اعداد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۸۳۳
انہیں مفرد کیا 8+3+3=14      1+4=5
مفرد عدد ۵ جو کہ تین سے زیادہ ہے ۔تین پر تقسیم کیا تو باقی بچے ۲
لہٰذا جواب دیا کہ کچھ دیر انتظارکرنا ہوگا شادی ہوجائے گی۔
واللہ اعلم بالصواب۔ 

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*