مجرب عملیات و وظائف

مجرب-عملیات-و-وظائف

زانی مرد یا عورت کو باندھنا

اگر کسی زانی مرد یا عورت کو باندھنا منظور ہو تو بکری کی آنت کو خوب دھوکر فَمَا ستطا عولہ نقبا 21 مرتبہ پڑھ کر گرہ لگا دے پھر کہے عقدت ذکر فلاں بن فلاں علیٰ فرج فلاں بنت فلاں ۔ اگر عورت ہو تو کہے عقدت فرض فلاں بنت فلاں علیٰ ذکر فلاں بن فلاں ۔ یہ عمل کسی نحس ساعت یا وقت میں کریں ۔

دشمن کا گھر ویران کرنا

کسی پرانی قبر سے تھوڑی سی خاک لا کر اس پر سات بار سورۃ مزمل پڑھ کر دم کریں اور وہ خاک کسی دشمن کے گھر میں ڈال دیں ، ویران ہو جائے گا۔

عہدہ کی بحالی

اگر عہدہ یا درجہ کم کر دیا گیا تو جمعرات کو روزہ رکھیں دن کو ایک بار سورۃ یٰس اور رات کو سونے کے وقت پھر ایک بار پڑھ کر سو بار کلمہ تمجید پڑھ کر سوجائیں تین دن تک ایسا کرنے سے کامیابی ہوگی سونے سے پہلے مقصد کی دعا کریں اور پھر کسی سے کلام نہ کریں ۔ 

یا رَحمٰنُ کا چلّہ

جو شخص یا رحمنُ کا سوا لاکھ کا چلہ نکال لے پھر اس اسم الہی کو ایک سو پانچ مرتبہ صبح اور ایک سو پانچ مرتبہ شام کو پڑھا کرے تو بے پناہ تسخیر خلق ہوگی کبھی محتاج نہ ہوگا اور کوئی شخص سر نہ اٹھا سکیگا اگر وہ کسی شخص کو کسی چیز پر دم کرکے کسی بھی مقصد کے لئے دیگا تو حاجت پوری ہوگی۔

ادائیگی قرض کا مجرب عمل

اگر کسی شخص پر قرض ہو اور کسی صورت ادا نہ ہو رہا ہو تو پانچوں وقت کی نمازوں کی پابندی کرتے ہوئے ہر نماز کے بعد ایک سو بار یا کبیرُ یا غنی یا محئی پڑھے ۔ انشاء اللہ جلد قرضہ ادا ہوجائے گا۔ 

دکان میں خیر و برکت کے لئے

اگر کوئی شخص اتوار یا پیر یا جمعرات یا جمعہ کو طلوع شمس کے وقت چاند کی اول تاریخوں میں کسی سعد دن و ساعت میں 511 کا نقش مربع آتشی زعفران سے کاغذ پر پر کرے اور دکان میں لٹکائے تو بہت خیر و برکت پائے گا ۔ 

مشکل سے نجات کے لئے 

اگر کوئی شخص مشکل میں ہو تو پانچ روز تک ہر شب دس ہزار بار “ اللہ الصمد ” پڑھ کر سوجائے دل میں نیت رکھیں کہ کوئی بزرگ خواب میں آکر مشکل کشائی کریں گے انشاء اللہ بہت جلد مشکل کا غیبی حل ظاہر کر دیا جائے گا ۔ چاہئے کہ ذکر کرکے اسی جگہ سوئیں اور بعد از ورد کسی سے بات چیت یا کھانا پینا نہ کرے۔ 

غنی و مالدار ہونے کے لئے

اگر کوئی شخص ہر جمعرات کی رات کو پاکیزہ جگہ میں تنہا بیٹھ کر ایک ہزار بار ” المعطی ” کا ورد کرے جس کے اول و آخر گیارہ گیارہ مرتبہ درود شریف ہو تو تھوڑے ہی عرصہ میں بے حساب کشائش ہو غنی اور مالدار ہوجائے شک نہ لائیں ۔ 

1 Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*