Ghāyat al-Ḥakīm Saturn Talisman | طلسم زحل از غائت الحکیم

زحل کو عمومی طور پر نحس اکبر سیارہ کہا جاتا ہے ۔ اس کی ایک وجہ یہ بھی ہے کہ تمام سیارگان میں اس کے اثرات سب سے زیادہ طاقت ور مانے گئے ہیں ۔ علمائے نجوم کے مطابق یہ ایک معمر اور دانشور سیارہ ہے اس کے بغیر کوئی شخس ترقی نہیں کر سکتا کسی بھی فرد کے زائچہ میں جب اس کا نحس دور شروع ہوتا ہے تو اس دوران یہ صبر و تحمل کا سبق دیتا ہے ۔ اس تارہ کی خصوصیت دیگر سیارگان سے مختلف واقع ہوئی ہیں یہ پابندی اور حدود میں جکڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے روحانی ترقی ہو یا مادی ، بلندی پر جانے کے لئے زحل جیسی پابندیوں کو عبور کرنا پڑتا ہے حق و باطل کی تمیز اس سے پیدا ہوتی ہے اس کا رشتہ ان دنیاوی تجربات سے ہیں جو صبر اور مشکلات کا تلخ سبق پڑھانے یا تجربہ سیکھنے کے بعد انسان کو حاصل ہوتا ہے ۔

اگر زحل زائچہ پیدائش میں سعد حالت میں ہوتو خدمات کےبعد دیرپا کامیابیاں ، ترقی کے سالوں میں اعلی مرتبہ ، اختیارات اور منصب دیتا ہے ۔ اور سخت کوششوں کے بعد شہرت لاتا ہے

اگر نحس پوزیشن میں ہو تو مصائب و آلام کا ایسا دور لاتا ہے کہ جس سے مالی اور جسمانی امور سخت متاثر ہوجاتے ہیں کسی کام کو بننے نہیں دیتا ہر کام میں رکاوٹ ، طبعیت میں اک عجیب اکتاہت و بوجھل پن طاری رہتا ہے ۔ سخت دوڑ دھوپ کے بعد بھی انسان وہیں کا وہیں رہتا ہے ۔ اگر ہم انسانی مشکلات کا تجزیہ کریں تو ان میں ایک یہ بھی ہے کہ کوئی انسان قوت، طاقت، عزت اور مرتبہ سے گرجائے ۔ غور کریں تو یہ خطرہ ہر فرد کے ساتھ ہمہ وقت لگا رہتا ہے ۔ خصوصاََ وہ افراد جو اپنے حلقے میں مخصوص مقام کو حاصل کرلیتے ہیں تو یہ خطرہ اس وقت بہت بڑھ جاتا ہے اس طرح اگر کوئی بڑا آدمی یکایک پبلک کی نظروں سے اوجھل ہوجاتا ہے تو اس کی وجہ صرف اور صرف زحل کے نحس اثرات ہو سکتے ہیں ۔ خواہ کوئی فرد کتنا ہی طاقتور کیوں نہ ہو ، بادشاہ ہو یا صدر۔ جب گردش زحل کی زد میں آتا ہے تو گر جاتا ہے امیدوں میں ناکامی کا سامنا کرنا پڑتا ہے ہر کام میں نقصان ہونا شروع ہوجاتا ہے نیک نامی اور شہرت خاک میں مل کر رہ جاتی ہے بات بات پر غصہ کا اظہار ہونے لگتا ہے دوست دشمن بننا شروع ہوجاتے ہیں ہر قدم غلط اٹھتا چلا جاتا ہے لوگ اس کی بات کا اعتبار نہیں کرتے ۔

خداوند قدوس جو کہ مسبب الاسباب ہے اس عالم ارضی کو عالم اسباب قرار دیتا ہے ۔ لہٰذا جب تک مناسب سبب اختیار نہ کیا جائے فائدہ نہیں پہنچ پاتا ۔ اللہ تعالیٰ قرآن حکیم میں فرماتا ہے کہ “والنجوم مسخرات بامرہ” اور یہ کواکب اللہ کے خاص امر کے پابند ہیں ۔ اس کا صاف مطلب ہے کہ ان کے اندر کچھ خاص تاثیرات پنہاں ہیں جب اثر ہی نہ ہوگا تو مسخر ہونے کا کوئی خاص فائدہ نہ ہوگا ۔ علمائے روحانیات نے کواکب کی تاثیرات معلوم کیں ۔ تو زحل کو قیام و استحکام ، تسخیر سلطنت و فتوحات ، ناموری ۔ بزرگی اور عظمت کے حصول ۔ اقبال مندی ۔ قیام مرتبہ اور غلبہ بر مخلوق کا سیارہ تسلیم کیا گیا ۔ لہٰذا گردش فلکی میں جب وضع کواکب کو اسی امر کا متقضی دیکھتے ہیں تو اس خاص وقت میں مادہ مہیا کر کے اس پر پورا پورا اثر آبائے علوی کا اتار لیتے ہیں جس کے نتیجے میں وہ آثار قدرت کاملہ الہٰیہ سے ظہور اثر کا سبب بن جاتے ہیں ۔ یاد رکھئے کہ یہ دنیا سباسب کی طرح ہے ایسا سبب ضرور تلاش کرنا پڑتا ہے جو انسان کو مصائب سے بچائے ۔ اس کے مرتبے کو استحکام دے اور اسے عظمت حاصل ہو ۔

زحل کو تاریکی کا سیارہ بھی کہا جاتا ہے یہ نحس اکبر بھی ہے لیکن اگر یہ نیک ہوجائے تو تمام کواکب سے زیادہ سعد اثرات دینے کا حامل ہے اور تمام کواکب کی تاثیر کو سمیٹ لیتا ہے یہ دولت کے دنیاوی سکھ کا مالک ہے ۔

علمائے نجوم کے مطابق زحل کو برج میزان کے ۲۱ درجہ پر قوت شرف حاصل ہوتی ہے ایک شرف سے دوسرے شرف کا درمیانی عرصہ تقریباََ ۲۹ سالہ ہوتا ہےاب اگر کوئی شخص اس کے شرف کے دوران مستفید نہ ہو سکا ہو تو پھر قدرت ایک موقع اور فراھم کرتی ہے جب یہ سیارہ اپنے اوج کے درجات سے گزرتا ہے اس وقت بھی سعادت کا حامل مانا جاتا ہے ۔
زحل جب دائرۃ البروج کا دورہ کرتے ہوئے برج قوس کے 13درجہ پر پہنچتا ہے تو اسے اوج کی قوت حاصل ہوتی ہے اس سال دو مرتبہ زحل ان درجات سے گزرے گا ایک ماہ جون کے دوران جب الٹی چال چل رہا ہوگا یہ دورانیہ 5 جون تا 18 جون 2016 تک ہوگا ۔

زمانہ قدیم سے علمائے روحانیات ایسے وقتوں سے فائدہ اٹھاتے ہوئے آرہے ہیں اب خوش قسمتی سے یہی سعادت نصیب ہونے جا رہی ہے اس سے فائدہ اٹھائیں یاد رکھیں کہ موزوں اور مناسب وقت کو اختیار کرنا ہی اسباب خوش بختی کے حصول میں معاون ہے پورے اعتقاد کے ساتھ اس وقت کی تاثیر سے فائدہ اٹھائیں ۔

اس وقت مختلف امور کے لئے اعمال تیار کئے جا سکتے ہیں ۔

مثلاََ دو جماعتوں یا گروپوں یا دو افراد کی دشمنی کو دوستی میں بدل دینا ۔

زمین ، جائداد یا ملازمت جانے کا خوف ہو یا کسی جگہ نکاح و نسبت ہو چکی ہو اور ٹوٹنے کا خطرہ ہو تو اسے روک دینا۔

زمین یا جائداد جس کی قسمت میں نہ ہو اسے صاحب جائداد بنانے کے لئے کوئی عمل کرنا یا کسی لیڈر یا مقرر کا قوم پر سرفرازی حاصل کرنا ۔

خلقت پر تسلط حاصل کرنا ۔

دشمنوں پر فتح پانے کے لئے ۔

ناقابل شکست ہستی بننے کے لئے ۔

اور وہ تمام افراد بھی فائدہ حاصل کر سکتے ہیں جن کے زائچہ پیدائش میں زحل ناقص اثرات کا حامل ہو یا وہ حضرات جو زحل کی ساڑھ ستی سے گزر رہے ہیں

اوج کا جب وقت آئے گا تو طویل عرصہ تک رہے گا ۔ جو بھی عمل تیار کریں بخورات زحل کا خاص اہتمام کریں

ان طلاسم کو وقت مخصوص میں چاندی کی لوح پر کندہ کرلیں ۔ بخورمیعہ سائلہ کا جلائیں ۔ وہ افراد جو خلق کے لئے کام کرتے ہیں وقت مخصوص سے قبل طلسم کی ڈائی بنوالیں اور استعمال میں لائیں ۔

وہ حضرات جو ادارہ سے تیار کروانے کے خواہشمند ہوں وہ وقت مخصوص سے قبل رابطہ کر سکتے ہیں ۔

[email protected]

Be the first to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.


*